پاکستان پیپلزپارٹی کی پلندری میں انتقامی کارروائیاں


پلندری–  پاکستان پیپلزپارٹی کی حکومت نے پلندری میں انتقامی کارروائیاں شروع کر دی، حکومت بننے کے بعد پلندر ی میں بجائے تعمیر و ترقی کرنے ،ملازمین سے انتقام لینا شروع کر دیا۔ دو سال میں پیپلزپارٹی کی حکومت نے ڈی ایچ او سدہنوتی ڈاکٹر حیات خان خان کے پانچ بار تبادلے کیئے جس سے یہ ثابت ہو تا ہے کہ پیپلزپارٹی انتقامی سیاست کو اپنے وطیرہ بنا چکی ہے۔ مخالفین کو دیوار کے ساتھ لگا کر اپنے مقاصد پورے کیئے جا رہے ہیں۔ پلندری ہسپتال میں سٹاف کی کمی کو پورا کرنے کے بجائے وہاں پر تعینات ملازمین سے انتقام لیا جا رہا ہے۔وزیر صحت اور وزیر اعظم آزادکشمیر پلندری میں انتقامی کارروائیاں بند کریں ڈاکٹر حیات ایک فرض شناس ، دیانتدار آدمی ہیں اُنھوں نے یہاں رہتے ہوئے سدہنوتی کے عوام کی خدمت کی ہے اور آج سدہنوتی سے تعلق رکھنے والا ہر عام و خاص آدمی ڈاکٹر حیات کے خلاف انتقامی کارروائی پر سراپا احتجاج ہے۔ ان خیالات کا اظہار عوام و شہری حلقوں نے اخباری نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اُنھوں نے کہا کہ اگر اسی طرح انتقام لیا جاتا رہا تو حکومت آزادکشمیر کے کسی بھی اہلکار کے لیے سدہنوتی کی سرزمین تنگ کر دی جائیگی۔