پاکستان پیپلزپارٹی کی پلندری میں انتقامی کارروائیاں


پلندری–  پاکستان پیپلزپارٹی کی حکومت نے پلندری میں انتقامی کارروائیاں شروع کر دی، حکومت بننے کے بعد پلندر ی میں بجائے تعمیر و ترقی کرنے ،ملازمین سے انتقام لینا شروع کر دیا۔ دو سال میں پیپلزپارٹی کی حکومت نے ڈی ایچ او سدہنوتی ڈاکٹر حیات خان خان کے پانچ بار تبادلے کیئے جس سے یہ ثابت ہو تا ہے کہ پیپلزپارٹی انتقامی سیاست کو اپنے وطیرہ بنا چکی ہے۔ مخالفین کو دیوار کے ساتھ لگا کر اپنے مقاصد پورے کیئے جا رہے ہیں۔ پلندری ہسپتال میں سٹاف کی کمی کو پورا کرنے کے بجائے وہاں پر تعینات ملازمین سے انتقام لیا جا رہا ہے۔وزیر صحت اور وزیر اعظم آزادکشمیر پلندری میں انتقامی کارروائیاں بند کریں ڈاکٹر حیات ایک فرض شناس ، دیانتدار آدمی ہیں اُنھوں نے یہاں رہتے ہوئے سدہنوتی کے عوام کی خدمت کی ہے اور آج سدہنوتی سے تعلق رکھنے والا ہر عام و خاص آدمی ڈاکٹر حیات کے خلاف انتقامی کارروائی پر سراپا احتجاج ہے۔ ان خیالات کا اظہار عوام و شہری حلقوں نے اخباری نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا اُنھوں نے کہا کہ اگر اسی طرح انتقام لیا جاتا رہا تو حکومت آزادکشمیر کے کسی بھی اہلکار کے لیے سدہنوتی کی سرزمین تنگ کر دی جائیگی۔


’’خوشیوں کا گھر آہوں اور سسکیوں میں تبدیل ‘‘


نالیاں سے گوجر خان جانے والی برات میں دُلہا کی گاڑی کو گہل پلندری کے مقام پر شدید حادثہ ، گاڑی کئی فٹ گہری کھائی میں جا گری ، گاڑی میں سوار دُلہا ، دُلہن اوردُلہے کی ہمشیرہ شدید زخمی ڈرائیور کو بھی شدید چوٹیں آئیں۔ نیا جوڑا اپنی زندگی کی شروعات سے قبل ہی حادثہ کا شکار ہوگیا۔ واقع کی اطلاع ملنے پر ایس ڈی ایم چوہدری مظہر ، پی ڈی ایس پی راجہ گلریز ، ایس ایچ او اسد شاہ ،سیاب عباسی اور العمل ویلفیئر فاؤنڈیشن کے نمائندے موقع پر پہنچ گئے اور زخمیوں کو بڑی جدوجہد کے بعد پلندری ہسپتال پہنچایا گیا۔ فرسٹ ایڈ کے بعد شدید زخمیوں کو تشویش ناک حالت میں فوری راولپنڈی ریفر کر دیا گیا۔ زخمیوں کی حالت خطرہ میں ہے جبکہ العمل ویلفیئر فاؤنڈیشن کے نمائندوں نے ریسکیو 1122سے رابطہ کیا مگر اُن کی گاڑی اُس وقت پہنچی جب زخمیوں کو پلندری ہسپتال کر دیا گیا تھا۔ عوامی حلقوں نے مطالبہ کیا ہے کہ ایسے حادثات کے لیے او ایسے مقامات جہاں سے بار بار حادثے ہو رہے ہیں وہاں پر حفاظتی اقدامات کیے جائیں عوام علاقہ شہریوں سیاسی و سماجی شخصیات نے محکمہ پولیس اور العمل ویلفیئر فاؤنڈیشن کے نمائندوں کی کارکردگی کو سرہااور ریسکیو 1122کی لاپروائی کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔


بابائے پونچھ الحاج کرنل خان محمد خان کی سالانہ برسی


1381874_633080453403050_1539544544_n

پلندری–  بابائے پونچھ الحاج کرنل خان محمد خان کی 52 سالانہ برسی 11نومبر کو پلندری میں منائی جا ری ہے اس سلسلہ میں ایک بڑی تقریب بابائے پو نچھ کے مزار پر ہوگی جس کے مہمان خصوصی سابق وزیر امور کشمیر برجیس طاہر ہونگے اس کے علاوہ سابق وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر مسلم لیگ کے جنرل سیکرٹری جنرل شاہ غلام قادر ممبر قانون ساز اسمبلی ڈاکٹر نجیب نقی خان اور دیگر قائدین خطاب کریں گے مسلم لیگ پو نچھ کے جنرل سیکرٹری سردار یاسر منشا نے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ سالانہ برسی شایان شان طریقے سے منائی جائیگی اور وزیر امو کشمیر برجیس طاہر آزاد پتن پل پر شاندار استقبال کیا جائے گا اس سلسلہ میں نوجوانوں پر مشتمل مختلف کمیٹیاں بنا دی گئی ہیں ۔


آزادحکومت کے پہلے دارالحکومت جو نجال ہل پلندری میں یوم تاسیس کے شاندار تقریب


970432_369763886485216_1662157039_nتحریر :سردار شمریزموجؔ 

آج سے 66سال قبل 24اکتوبر 1947کو موجودہ آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر میں پہلی نقلابی حکومت غازی سردار محمد ابراہیم خان بانی آزادکشمیر کی قیادت میں قائم ہوئی۔پھر اُن کی قیادت میں موجودہ خطہ بشمول گلگت بلتستان آزاد ہوا ۔اُنھوں نے پلندری سے چند کلو میٹر کے فاصلہ پر انقلابی حکومت کا دارالحکومت قائم کیا ۔جو تاریخ میں آزاد حکومت کا پہلا دارالحکومت ٹھہرا ۔ہر سال 24اکتوبر 1947ء ؁کو سرکاری طور پر یہ دن یوم تاسیس(سالگرہ) کے حوالہ سے منایا جاتا ہے ۔ضلع سدہنوتی میں ایک تقریب سرکار ی سطح پر پلندری ریسٹ ہاؤس میں منعقد ہوئی پر چم کشائی پر یڈ سلامی اور تقاریر ہوئی ہیں ۔ لیکن تاریخی مقام جو نجال ہل (سابقہ دارالحکومت )میں ایک پر و قار تقریب منعقد ہوتی ہے اس تقریب کی اہمیت افادیت کو اجاگر کرنے مین جموں و کشمیر پیپلز پارٹی کا بڑا کردار ہے گزشتہ کئی سالوں سے یہ تقریب نہایت با وقار اور احترام سے منائی جاتی ہے یہاں بڑی بڑی سیاسی سماجی مذہبی عسکری قیادتیں تشریف لا چکی ہیں جو غازی ملت سردار محمد ابراہیم خان اور دیگر اسلاف کی قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کرتی ہیں 24اکتوبر کو یہاں ایک شاندار تقریب یوم تاسیس منعقد ہوئی جس کی صدارت سابق چیف جسٹس سید منظور الحسن گیلانی نے کی جبکہ مہمان خصوصی مسلم لیگ ن کے مرکزی صدر راجہ فاروق حید ر تھے تقریب سے سردار خالد ابراہیم خان سردار خان بہادر خان، ایم ایل اے ڈاکٹر نجیب نقی خان سردار محمود اقبال مرکزی راہنما جے کے پی پی سردار فاروق ایڈووکیٹ ،سردار جاوید نثار ، محترمہ نبیلہ ارشاد ایڈووکیٹ مرکزی سیکرٹری جنرل جے کے پی پی ،سردار الطاف ،ڈاکٹر محمد کلیم ،ڈاکٹر محمد حلیم خان ،تسنیم باغی ،سردار ریاض ،عزت بیگ ،یار محمد لطیف حسرتؔ و دیگر مقررین خطاب میں شامل تھے ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے راجہ فاروق حیدر نے غاز ی ملت سردار محمد ابراہیم خان کی تاریخی خدمات کو زبر دست الفاظ میں سراہتے ہوئے کہا کہ اُنھوں نے نامساعد حالات میں ڈوگرہ راج کو للکارا 19جولائی 1947کو قرارداد الحاق پاکستان اپنے گھر میں منظور کرائی پھر 24اکتوبر 1947کو انقلابی حکومت قائم کی اور اس کی قیادت کی اور خطہ کو آزاد ی کی نعمت سے ہمکنار کیا ان کا کوئی نعم البدل نہ ہے ۔اُنھوں نے ساری زندگی ملک اور قوم کی خدمت کی ۔جو نجال ہل ایک تاریخی مقام ہے اس کی اہمیت کو اجاگر کیا جاتا رہے گا۔اُنھوں نے کہا کہ زندہ قومیں اپنے اسلاف کی قربانیوں کو فراموش نہیں کرتی اُنھوں نے کہا کہ میرے والد نے غازی ملت کا بھر پور ساتھ دیا اور تحریک آزادی کشمیر میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اُنھوں نے کہا کہ پو نچھ کے عوام کی لا زوال قربانیاں ہیں ۔ غازی ملت سردار ابراہیم نے دارالحکومت یہاں قائم کیا اور پھر مظفر آباد منتقل ہوا سردار عتیق مظفرآباد سے اسے منتقل کرنا چاہتا تھا وہ سازش ناکام ہوئی اور سردارخالد ابراہیم نے ہمارا بھر پور ساتھ دیا اُنھوں نے کہا کہ اس مقام کی تاریخی اہمیت کو مدِ نظر رکھتے ہوئے تعمیر ترقی کی جائے ۔اُنھوں نے سید منظور الحسن گیلانی کے کردار سراہے ۔سید منظور حسین گیلانی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ زندہ قومو ں کے اندر جو اکابر ین پیدا ہوتے ہیں وہ قوم کو منزل کا تعین کر کے دیتے ہیں ۔سردار محمد ابراہیم خان نے نہایت مشکل اور نامساعد حالات میں قوم کی قیادت کی ۔اللہ تعالیٰ نے اُن سے جو کام لینا تھا وہ بھی اُن کی تاریخی خدمات کو تاریخ میں سنہر ی حروف میں لکھا جائے گا ۔یوم تاسیس بھر پور انداز میں بنانے کا مقصد آنے والی نسلوں تاریخ سے آگاہ کرانا ہے کہ آزادی کیا ہے ؟اُنھوں نے سیر حاصل گفتگو کی تحریک آزادی کشمیر ، پاکستان کی اسمبلی سینٹ مین موثر نمائیدگی اور دیگر معاملات پر سیر حاصل بات کی اور پو نچھ کی دھرتی کے باسیوں کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کیا ۔اور کہا کہ وقت آنے پر درست فیصلہ کیا جائے اور سچی اور خیر خواہ قیادت کو سامنے لایاجائے پونچھ غازیو،مجاہدوں شہدا کی سر زمین ہے ۔ سردار خالد ابراہیم نے تمام شرکا شکریہ ادا کیا اور 19جولائی 1947و 24اکتوبر 1947کے حوالہ سے تاریخی حوالہ جات سے شرکا کو آگاہ کیا اُنھوں سے سید منظور الحسن گیلانی ،راجہ فاروق حیدر اور دیگر تمام مقررین More